22

گوشت خراب ہونے سے کیسے بچائیں؟

تحریر شئیر کریں

گوشت خراب ہونے سے کیسے بچائیں؟

عیدالاضحیٰ کے موقع پر مسلمان سنت ابراہیمی کی پیروی کرتے ہوئے جانور قربان کرتے ہیں۔ یہ موقع ہمیں قربانی اور ایثار کا درس دیتا ہے۔ مگر اکثر اوقات ہم دیکھتے ہیں کہ قربانی کا گوشت بڑی مقدار میں فریجوں میں بھر دیا جاتا ہے۔ اس سے نہ صرف گوشت ضائع ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے بلکہ اس کی افادیت بھی کم ہو جاتی ہے۔

اسلام کی تعلیمات کے مطابق، قربانی کے گوشت کو تین حصوں میں تقسیم کرنا چاہیے: ایک حصہ خود کے لیے، دوسرا رشتہ داروں کے لیے، اور تیسرا ضرورت مندوں کے لیے۔ یہ اصول ہمیں اس بات کی یاد دہانی کراتا ہے کہ دوسروں کے ساتھ اپنا رزق بانٹنا ہماری ذمہ داری ہے۔ گوشت ذخیرہ کرنے سے وہ مقصد فوت ہو جاتا ہے جس کے لیے قربانی کی جاتی ہے۔

نیوٹن کا تیسرا قانون حرکت بھی ہمیں ایک قیمتی سبق دیتا ہے: “ہر عمل کا ایک ردعمل ہوتا ہے۔” اس اصول کے تحت، جب ہم دوسروں کے ساتھ اچھائی کرتے ہیں، تو وہ اچھائی ہمیں واپس ملتی ہے۔ اگر ہم قربانی کے گوشت کو ضرورت مندوں تک پہنچاتے ہیں، تو نہ صرف ہم انہیں خوشی دیتے ہیں بلکہ اللہ تعالیٰ کی رضا بھی حاصل کرتے ہیں۔ اس کا ردعمل ہمیں دنیا اور آخرت میں برکتوں کی صورت میں ملتا ہے۔

فریج میں گوشت بھرنے سے ایک اور مسئلہ بھی پیدا ہوتا ہے: بجلی کی بندش۔ موجودہ حالات میں بجلی کی لوڈشیڈنگ ایک عام مسئلہ ہے، اور گوشت کے خراب ہونے کا خدشہ ہمیشہ رہتا ہے۔ اگر گوشت خراب ہو جائے تو نہ صرف یہ کہ وہ ضائع ہو جاتا ہے بلکہ ہمارے لیے بھی نقصان دہ ہو سکتا ہے۔

اس کے برعکس، اگر ہم گوشت کو جلدی سے تقسیم کر دیں تو یہ زیادہ لوگوں تک پہنچ سکتا ہے اور ان کی ضرورت پوری کر سکتا ہے۔ اس سے نہ صرف ان لوگوں کی دعائیں ملتی ہیں بلکہ ہمیں بھی سکون اور خوشی ملتی ہے۔

قربانی کے گوشت کو محفوظ کیسے کریں؟

نمکین گوشت کی ترکیب

لہٰذا، فریج میں گوشت ذخیرہ کرنے کے بجائے، ہمیں چاہیے کہ ہم اسے جلد از جلد تقسیم کریں۔ اس سے نہ صرف گوشت ضائع ہونے سے بچ جائے گا بلکہ ہمیں اللہ تعالیٰ کی رضا بھی حاصل ہو گی۔ ہمیں یاد رکھنا چاہیے کہ اللہ نے جو رزق دیا ہے، وہ دوسروں کے ساتھ بانٹنے کے لیے ہے، اور یہی حقیقی قربانی ہے۔
گوشت خراب ہونے سے کیسے بچائیں؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں