14

پیارے نبی ﷺ کا پیارا نواسہ ؓ

تحریر شئیر کریں

پیارے نبی ﷺ کا پیارا نواسہ ؓ

حضرت امام حسن رضی اللہ عنہ کا نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم 

لیہ وسلم سے تعلق نہایت گہرا اور محبت بھرا تھا۔ ان کی زندگی کے مختلف واقعات سے یہ تعلق اور محبت ظاہر ہوتی ہے۔ یہاں ہم حضرت امام حسن رضی اللہ عنہ کے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ تعلق کے چند اہم پہلو بیان کریں گے:


محبت اور شفقت


– **محبت اور شفقت**: نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم اپنے نواسے حضرت امام حسن رضی اللہ عنہ سے بے حد محبت کرتے تھے۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم انہیں اپنے کندھوں پر اٹھاتے، اپنے ساتھ مسجد لے جاتے اور نماز کے دوران بھی ان کی محبت کا اظہار کرتے۔


دعائیں اور نصیحتیں


– **دعائیں**: نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم حضرت امام حسن رضی اللہ عنہ کے لئے خصوصی دعائیں کرتے تھے۔ ایک مرتبہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: “اے اللہ! میں حسن اور حسین سے محبت کرتا ہوں، پس تو بھی ان سے محبت فرما۔” (صحیح بخاری)
– **نصیحتیں**: نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت امام حسن رضی اللہ عنہ کو اسلامی تعلیمات اور اخلاقیات کی تعلیم دی اور ان کی شخصیت سازی میں اہم کردار ادا کیا۔



مشہور واقعات


– **کندھوں پر سوار کرنا**: ایک مشہور واقعہ ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نماز ادا کر رہے تھے اور حضرت امام حسن اور حضرت امام حسین رضی اللہ عنہما ان کی پیٹھ پر سوار ہو گئے۔ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے نماز کے دوران ان کو اتارا نہیں بلکہ محبت کے ساتھ ان کو سوار رہنے دیا۔


– **خطبات میں ذکر**:

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے خطبات میں بھی حضرت امام حسن اور حضرت امام حسین رضی اللہ عنہما کا ذکر کیا اور ان کی فضیلت بیان کی۔



وراثت اور جانشینی


– **وراثت**: نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنی محبت اور تربیت کی وراثت حضرت امام حسن رضی اللہ عنہ کو دی۔ آپ نے ان کی اخلاقی اور دینی تعلیمات کی بنیاد رکھی جو بعد میں ان کی شخصیت کا اہم حصہ بنی۔



حسن اور حسین، جنتی نوجوانوں کے سردار


– **حدیث**: نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: “حسن اور حسین جنتی نوجوانوں کے سردار ہیں۔” (ترمذی) اس حدیث سے ظاہر ہوتا ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم حضرت امام حسن اور حضرت امام حسین رضی اللہ عنہما کی قدر و منزلت کو بیان کرتے تھے۔



نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی آخری دعائیں


– **آخری دعائیں**: نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی آخری دعاؤں میں بھی حضرت امام حسن رضی اللہ عنہ کا ذکر ملتا ہے۔ آپ نے فرمایا: “اے اللہ! میرے اہلِ بیت سے محبت کر اور ان کی حفاظت فرما۔”

حضرت امام حسن رضی اللہ عنہ کا نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے تعلق ایک مثال ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے اہلِ بیت کے ساتھ کس طرح کا محبت بھرا سلوک کیا اور انہیں اسلامی تعلیمات کی روشنی میں تربیت دی۔ یہ تعلق ہمیں بتاتا ہے کہ خاندان کے افراد کے درمیان محبت، شفقت، اور احترام کا کیسا رشتہ ہونا چاہئے۔

پیارے نبی ﷺ کا پیارا نواسہ ؓ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں