16

آل سعودیہ اور مسجد نبوی: یزید کی یاد تازہ؟

تحریر شئیر کریں

آل سعودیہ اور مسجد نبوی: یزید کی یاد تازہ؟

حالیہ واقعات میں آل سعودیہ نے مسجد نبوی میں گاڑیاں چلانے کی اجازت دی ہے، جس نے بہت سے مسلمانوں کے دلوں میں غم و غصہ بھڑکا دیا ہے۔ یہ واقعہ یزید کی یاد دلاتا ہے، جو اپنے دور میں گھوڑے مسجد نبوی میں باندھا کرتا تھا۔ یزید کا ذکر کرتے ہوئے مسلمانوں کے ذہنوں میں کربلا کا دردناک سانحہ آتا ہے، جس میں حضرت امام حسین (رضی اللہ عنہ) اور ان کے خاندان کے افراد شہید ہوئے تھے۔

یزید بن معاویہ کی خلافت کا دور مسلمانوں کے لیے انتہائی تکلیف دہ رہا ہے۔ کربلا کی جنگ میں امام حسین (رضی اللہ عنہ) کی شہادت نے یزید کے ظلم و ستم کو نمایاں کیا۔ اس وقت مسجد نبوی میں گھوڑے باندھنے کا عمل ایک غیر اخلاقی حرکت کے طور پر دیکھا گیا تھا۔

مسجد نبوی مسلمانوں کی مقدس ترین جگہوں میں سے ایک ہے، جہاں ہر سال لاکھوں زائرین عبادت کرنے آتے ہیں۔ ایسے میں آل سعودیہ کی جانب سے گاڑیاں چلانے کی اجازت دینا لوگوں کے جذبات کو مجروح کر رہا ہے۔ یہ عمل نہ صرف مسجد کی تقدس کو پامال کرتا ہے بلکہ یزید کی ظالمانہ یاد کو بھی زندہ کرتا ہے۔

سوشل میڈیا اور مختلف فورمز پر لوگوں نے اس عمل کی شدید مذمت کی ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ مسجد نبوی کی حرمت کو پامال کرنا کسی بھی صورت میں جائز نہیں ہے اور آل سعودیہ کو فوری طور پر اس اقدام کو واپس لینا چاہیے۔

مسجد نبوی میں گاڑیاں چلانے کی اجازت دینا ایک نہایت حساس معاملہ ہے، جو مسلمانوں کے دلوں میں یزید کے ظلم و ستم کی یاد کو تازہ کر دیتا ہے۔ آل سعودیہ کو چاہیے کہ وہ مسجد نبوی کی حرمت اور تقدس کو برقرار رکھتے ہوئے ایسے اقدامات سے گریز کریں۔

#مسجدنبوی #آل_سعودیہ #یزید #کربلا #اسلامی_تاریخ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں