206

ملک ریاض امیر کیسے بنا؟

تحریر شئیر کریں

ملک ریاض امیر کیسے بنا؟

بہت سی عظیم کہانیاں آپ نے پڑھی ہوگی جن کا تعلق غریب گھرانے سے ہوتا ہے مگر وہ بڑے ہو کر اپنی محنت سے دولت کماتے ہیں مگر یہ کہانی مختلف ہے۔ ایک ایسا بچہ جو گھر میں چائے پلاتا تھا آج وہ اربوں کا مالک ہے اور اس کا نام دنیا کے امیر ترین شخص میں ہوتا ہے۔ وہ کوئی اور نہیں بلکہ پاکستان کا ملک ریاض ہے۔

ان چند سالوں میں وہ ارب پتی بن گیا جو ایک چائے پلانے والا بچہ تھا۔ وہ کسی بھی زمین کو چھوتا ہے تو سونا بن جاتی ہے۔ کہتے ہیں کہ لوگوں کے پاس دولت آتی ہے مگر ملک ریاض کے پاس دولت برستی ہے یہ سب کیسے ہوا ان کی زندگی اچانک کیسے تبدیل ہوئی یہ سب آج تحریر کا حصہ ہے۔


ملک ریاض کا سفر


ملک ریاض کا تعلق غریب گھرانے سے تھا۔ ان کے والد معمولی جاب کرتے تھے جن کی وفات کے بعد ملک ریاض پر گھر کی ذمہ داری آئی۔ وہ میٹریک میں دو بار فیل ہوئے تیسری بار کم نمبروں سے پاس کیا۔ اس کے بعد وہ مختلف کام کرتے رہے۔ یہاں تک کہ سڑک پر چارکول لگانے کا کام کیا۔ ستر کی دہائی میں وہ ایک گھر میں چائے پلانے کا کام کرتے تھے ان کی بیٹی کو ہیضا تھا اور ان کے پاس علاج کے پیسے نہیں تھے۔

وہ انہوں نے ادھار لے کر اور چیزیں بیچ کر ادھار چکایا اور علاج کروایا۔ ملک ریاض کے سوتیلے والد چھوٹے سے کنسٹرکشن کے ٹھیکدار تھے۔


اسی کی دہائی میں ملک ریاض نے اپنا تعمیراتی کا کام شروع کیا چھوٹے سے پیمانے سے یہ کام شروع کیا۔ انہوں نے دیکھا اس وقت کراچی میں رئیل سٹیٹ کا کام تیزی سے جاری ہے۔ انہوں نے کالونی بنانا شروع کی۔ ملک ریاض نے نوے کی دہائی میں بحریہ سے ایگریمینٹ کیا اور ان کے ساتھ کام شروع کیا۔ یہ بحریہ کا نام اتنا پرکشش لگا اور پسند آیا کہ وہ اپنے کام کا نام بحریہ رکھنے لگے لیکن نیوی نے انہیں منع کیا کہ بحریہ کا نام استعمال نہ کریں تب انہوں نے اس وقت کے وزیر اعلیٰ سے اجازت لی۔

نیوی عدالت پہنچ گئی اور عدالت نے ملک ریاض کو قانونی اجازت دے دی کہ وہ بحریہ کا نام استعمال کر سکتے ہیں۔ پہلا بحریہ کا پروجیکٹ اسلام آباد میں شروع ہوا۔ پھر کراچی ، لاہور اور اب پشاور تک پہنچ گیا ہے۔ ملک ریاض کے چند ہزار ملازم ساٹھ ہزار میں بدل گئے تھے جو اب لاکھوں میں ہونگے۔


ملک ریاض کے بارے میں مشہور ہے وہ جس زمین پر کالونی بنانا سٹارٹ کرتے ہیں اس زمیںن کی قمت بڑھ جاتی ہے وہ جس جگہ کا انتخاب کرتے ہیں وہ جگہ ایک الگ اہمیت بنالیتی ہے۔ وہ جو ایک غریب شخص تھا جس کےپاس پیسے نہیں تھے۔ بحریہ کی شاندار کامیابی کے بعد بڑے بڑے لوگ اس کے نام کے ساتھ جڑنے کی خواہش رکھنے لگے۔ کیونکہ بحریہ ایک برانڈ بن چکاتا ہر بزنس مین کی خواہش ہوتی کہ وہ بحریہ کے ساتھ اپنا تھوڑا سا حصہ بھی شامل کرے۔

ملک ریاض وہ واحد آدمی ہے جس کا تعلق سیاست کے تینوں بڑے شخص سے بہت اچھا ہے۔ آصف علی زرداری تو شئیر ہولڈر ہے۔ نواز شریف کے ساتھ ملک ریاض عمران خان کے گھر بھی کسی وقت جاسکتا ہے۔ ملک کے بڑے بڑے صحافی بھی اس کے ساتھ تعلقات بنانا چاہتے ہیں۔
ملک ریاض کی اس وقت کل مالیت اربوں کے قریب ہے۔ مگر اس کے باوجود وہ اپنے برے دنوں کو نہیں بھولا اور گھر پر ایک عام شخص کی طرح رہتا ہے ۔

ملک ریاض امیر کیسے بنا؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں