190

امیر باپ غریب باپ

تحریر شئیر کریں

امیر باپ غریب باپ

ہر انسان کی خواہش ہوتی ہے کہ وہ امیر ہو، اس کے پاس اتنے پیسے ہوں جس سے وہ اپنی خواہش پوری کرے۔ لیکن بدقسمتی سے پاکستان مین زیادہ تر لوگ مڈل کلاس ہیں اور وہ غریب ہیں جس میں ان کی ساری زندگی خرچہ مینیج کرنے میں گزر جاتی ہے۔ کچھ لوگ ہوتے ہیں جو جدی پشتی امیر ہیں اور کچھ جو مڈل کلاس ہیں ان میں کچھ لوگ ہوتے ہیں جو سپیسیک فارمولہ استعمال کر کے امیر ہوتے ہیں۔ اور کچھ جو ساری زندگی مڈل کلاس بن کر گزارتے ہیں۔وہ کہتے ہیں کہ یہ قسمت سے امیر ہوا ہے یا کچھ بھی لیکن وہ خود کبھی اس فارمولے پرعمل نہیں کرتے۔

آج ہم آپ سے اس فارمولے کو بیان کرنے والے ہیں۔ کہ پیسے کو کس طرح سے مینیج کریں کہ آپ کروڑ پتی اور لک پتی بن جائیں گے۔

روبرٹ نے ایک کتاب لکھی جس کا نام Rich Dad poor Dad ہے یعنی امیرباپ غریب باپ، یہ بیسٹ سیلر کتاب ہے جس کی بنیادی وجہ اس کتاب میں پیسہ کمانے کا ایسا فارمولہ بتایا گیا ہے جس سے امیر ہوسکتے ہیں۔ روبرٹ نے کتاب میں دو آدمی کا ذکر کیا جس میں ایک روبرٹ کے والد تھے۔ اور دوسرا اس کے فرینڈ کے والد جو امیر اور آٹھویں جماعت پڑھا تھا۔

جبکہ جو روبرٹ کے والد ہیں وہ پی ایچ ڈی تھے مگر غریب تھے۔ جو امیر تھا اس کی سوچ تھی کہ پیسہ نہ ہونا ہر چیز کی فساد کی جڑ ہے جو غریب تھا وہ سوچتا تھا کہ پیسہ فساد کی جڑ ہے۔غریب مہنگی چیز دیکھ کر سوچتا تھا کہ میں یہ چیز نہیں لے سکتا۔ امیر چیز لیتے وقت یہ سوچتا تھا کہ میں یہ چیز افورڈ کرسکتا ہوں اگر نہیں کرسکتا تو ایسا کیا کروں جس سے میں یہ چیز خریدنے کے قابل ہوجاؤں۔

اگر پیسہ کمانا چاہتے ہیں تو ا س کی چاہت پیدا کرنا چاہئے جب چاہت نہیں ہوگی تو آپ کبھی وہ چیز نہیں لے سکتے۔

پیسہ کمانے کے لئے ضروری ہے کہ نئی چیزیں سیکھیں چاہے آپ جس عمر میں ہوں آپ سیکھیں۔ اور آپ اس کا ارادہ بلند کریں جب تک ارادہ پکا نہیں ہوگا کوئی علم ڈگری ، ہنر کام نہیں آئے گی۔ تیسری چیز جنون کی حد تک چیزوں کو حاصل کرنے کی تگ ودود میں لگ جائیں۔ اگر آپ پیسہ کمانے چاہتے ہین تو پہلے اس کے لئیے سوچیں کہ آپ ایسا کیا کریں اگر آپ بزنس کر رہے ہیں تو آپ ایک ارادہ لے کر لیں اور چاہنے کی خواہش کو مضبوط کریں۔

امیرباپ غریب باپ میں بتایا گیا ہے ک غریب باپ اپنے بچے کو بزنس کے بارے میں وہ سب نہیں بتاتے جو امیر لوگ بتاتے ہیں۔بزنس ہی ترقی دلواتا ہے نا کہ نوکری،

اس کتاب میں بتایا گیا ہے کہ غریب پیسے کے لیے کام کرتا ہے جبکہ پیسہ امیروں کے لیے کام کرتا ہے۔

اس کتاب میں بتایا گیا ہے کہ پیسہ وہی ہے جو بچ گیا،جو خرچ ہو گیا وہ نہیں ،سو اثاثے بنائیں یہ آپ کو پیسہ بھی دیں گے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں