106

میٹرو بس سروس

تحریر شئیر کریں

میٹرو بس سروس

امنہ راجپوت
میٹرو بس سروس کا اغاز لاہور سے ہوا۔ اس کا منصوبہ جناب شہباز شریف صاحب کی حکومت میں کیا گیا، شہباز شریف کا لاہور کو ایک ماڈرن سٹی بنانے کا خواب تھا، جو کہ کافی حد تک اس پر عمل بھی کیا گیا، لاہور میں جب بس سروس کا اغاز ہوا مخالفت کرنے والوں نے کئی مخالفت بھی کی لیکن جب اس کا صحیح اغاز ہوا تو پہلے تو لوگ حیران ہوئے پھر خوش ہوئے پھر وقت کے ساتھ ساتھ لوگ اس سے فائدہ اٹھانے لگے۔ لوگ ویک اینڈ پہ اپنے فیملی کو لے کر اس کی سیر کو نکلے خوش بھی ہوئے اور لطف اندوز بھی پہلا ایک مہینہ ٹکٹ کے بغیر اجازت تھی۔ پھر اس ٹکٹ کا ٹوکن 30 روپے کا مقرر ہوا۔ جو کہ اج کل کے مہنگائی کے دور میں بہت کم قیمت پہ پورے شہر کو دیکھنا کسی تحفے سے کم نہیں تھا۔ اس منصوبے کو اور پھیلانے کے لیے اسلام اباد میں بھی میٹرو بس سروس کا اغاز کیا گیا جس کا باقاعدہ اغاز 2015 میں کیا گیا جو کہ اسلام اباد اور راولپنڈی میں رہنے والوں کے لیے ایک تحفے سے کم نہیں تھا کیونکہ 30 روپے میں پورے اسلام اباد اور راولپنڈی کی سیر کر سکتے ہیں ، اسلام اباد اور راولپنڈی میں موجود تمام اہم ادارے یونیورسٹیز، ہسپتال، شاپنگ مال، تمام اہم اداروں کو دیکھتے ہوئے میٹرو بس سروس کو ڈیزائن کیا گیا۔ تاکہ غریب عوام اس سے فائدہ اٹھا سکےمیٹرو بس سروس کا اغاز اسلام اباد اور راولپنڈی میں رہنے والوں کے لیے ایک تحفے سے کم نہیں ہے کیونکہ وہ لوگ جن کے پاس ان کا ماہانہ خرچ پورا نہیں ہوتا وہ 30 روپے میں اسلام اباد سے پنڈی جا سکتے ہیں اپنا کرایہ بچا سکتے ہیں صرف 30 روپے میں وہ اپنے اپنے مخصوص جگہ پر پہنچ سکتے ہیں۔ جو کہ ایک خوش ائند بات ہے۔ وہ لڑکیاں جو جن کے والدین ان کو اکیلے باہر نہیں بھیجتے تھے وہ میٹرو بس سروس کے ذریعے بغیر خوف کے جاتی ہیں کیونکہ میٹرو بس سروس لڑکیوں کے لیے بہت سیف ہے۔ میٹرو بس سروس کا عملہ انتہائی معاون اور مددگار ہے۔ اسلام اباد والے اس کو پنجاب حکومت کا تحفہ مانے تو غلط نہیں ہوگا۔ کیونکہ پٹرول کی بڑھتی ہوئی قیمتیں اور کرائے کی وجہ سے لوگ اب اپنے افس سکول یا اپنے کام کی جگہ پہ جانے کے لیے بھی اچھا خاصا کرایہ لگاتے ہیں۔ میٹرو بس سروس کا ایک اور اچھا کام کالج میں جانے والے بچوں کے لیے اس بس کو فری کر دیا گیا ہے۔ جو کہ بغیر ٹوکن کے سفر کر پاہیں گے۔ بدترین مہنگائی کے اس موقع پر میں میٹرو بس والوں کا بہت اچھا اقدام ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں